Wed. May 5th, 2021

The RealKashmir News

"The Voice of Voiceless"

Aqeedat | رمضان المبارک کا مقدس مہینہ

1 min read
Aqeedat | رمضان المبارک کا مقدس مہینہ
Share this
22 Apr 2021

ماہ رمضان ہمارے لئے رحمتوں اور برکتوں کے خزانے لے کر آتا ہے ۔خوش نصیب ہیں وہ لوگ جن کی زندگی میں یہ مبارک مہینہ آیا ۔اس مبارک مہینے میں دن رات رحمتوں کی بارش ہوتی ہے ہر طرف پاکیزگی کا احساس ہوتا ہے ۔شیاطین قید میں جکڑے لے جاتے ہیں اور اللہ تعالی کی رحمت کے دروازے کھول دیے جاتے ہیں ۔
ہمارے پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے پہلے آنے والے انبیاء کی امتوں پر بھی روزے فرض کیے گئے تھے جبکہ امت کے مسلماں کو رمضان کے تیس روزے رکھنے کا حکم دیا گیا ہے ۔اس مہینے میں قرآن حکیم کا نزول ہوا جو تمام عالم کے لیے ہدایت کا سرچشمہ ہے ۔آپ سب دوست قران مجید تو پڑھتے ہوں گے اور بہت سے ساتھ نماز باجماعت بھی پابندی سے ادا کرتے ہوں گے ۔رمضان میں عبادت کا مزہ ہی کچھ اور ہے ۔سحری کے وقت اٹھنا روزہ رکھنا نماز پڑھنا پھر قرآن حکیم کی تلاوت کرنا اور رات کو تراویح کے لئے مسجد جانا ان سب سے عبادات کا اجر اللہ میاں کے گناہ زیادہ دیتا ہے ۔اس مہینے کے روزے رکھنے والے کو اللہ تعالی اپنے محبوب بندوں میں شمار کرتا ہے ۔
رمضان المبارک میں روزہ رکھنے کا مطلب صرف یہ نہیں ہے کہ آپ بھوکا پیٹ رہیں گے ۔بلکہ رمضان المبارک کا اصل مطلب یہ ہے کہ آپ اپنے آپ میں ایک تقوی پیدا کریں اللہ سبحانہ و تعالی کی یاد میں اپنی زندگی بسر کریں اور اپنی زندگی میں آپ کی غلطیاں ہیں ان کی غلطیوں کو سدھارنے کی کوشش کرے ۔اپنی غیر مسلم بھائیوں کو اپنے دین اسلام کے بارے میں بتانے کی کوشش کریں ۔المبارک اس مطلب ہے کہ اپنے گناہوں سے اپنے آپ کو پاک و شفاف کرنا اپنے رب کے دربار میں گریہ زاری کر کے رب کے سامنے رو رو کر گڑگڑا کر اپنے گناہوں کی معافی کروانا ۔
روزہ کی بیماریوں کا علاج بھی ہے عام دنوں میں ہم لاپرواہی سے کھاتے پیتے ہیں اور طرح طرح کی بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں مگر آپ نے دیکھا ہوگا کہ رمضان میں بہت کم لوگ بیمار پڑتے ہیں ۔اس مبارک مہینے میں ہم ہر کام وقت پر کرتے ہیں ۔سحری کے بعد افطاری تک نہ تو ہم کھاتے ہیں نہ پیتے ہیں اور نہ ہی شرارتیں کرتے ہیں ۔بلکہ ہماری کوشش یہی ہوتی ہے کہ جو کام بھی کیا جائے وہ اللہ تعالی کی خوشنودی کے لئے ۔کوئی ایسا کام نہ کیا جائے جس سے رمضان کا تقدس مجروح ہو ۔
کچھ ساتھی ابھی چھوٹے ہوں گے اور روزے نہیں رکھے لیکن انہیں یہ تو معلوم ہوگا کہ رمضان میں سرعام کھانا پینا بری بات ہے ۔اس مبارک مہینے میں اللہ تعالی کے حضور اپنے گناہوں کی معافی مانگتے ہیں ۔رمضان المبارک امت مسلمہ کے لئے نیکیوں کی فصل بہار ہے ۔ایک نیکی کرنے سے ستر نیکیوں کا ثواب ملتا ہے ۔اس ماہ میں ہمیں درج ذیل آداب کو ملحوظ رکھنا ضروری ہے ۔انتہائی ذوق و شوق اور اہتمام کے ساتھ رمضان المبارک کا استقبال کریں اور رمضان المبارک کا چاند نظر آنے پر مسنون دعا پڑھیں ۔
پورے ماہ کے روزے نہایت ذوق و شوق اور اہتمام کے ساتھ رکھیں بلا عذر کوئی روزہ نہ چھوڑیں کیونکہ اگر کوئی بلا عذر روزہ اڑتا ہے تو ساری زندگی بھی روزہ رکھے تو پھر بھی اس کے برابر روزہ نہیں رکھ سکتا ۔
اس ماہ رمضان میں عبادات اور اعمال صالحہ کا خصوصی اہتمام کریں ۔فرائض کے علاوہ نوافل بھی کثرت سے ادا کریں ۔اس مہینے میں نفلی عبادات عام مہینوں کے فرض عبادت کی طرح ہوتی ہے ۔اس مقدس مہینے میں قرآن کریم کی تلاوت کثرت سے کریں کیونکہ یہ مبارک مہینہ قرآن کریم سے خصوصی تعلق اور نسبت رکھتا ہے ۔پہلی رمضان المبارک ان تمام رحمتوں کا سرچشمہ ہے جو قرآن کریم کے فرائض و ثمرات کے ثمر ہیں ۔اس ماہ مبارک میں جتنا ہوسکے صدقہ اور خیرات کریں ۔غریبوں ,بیواؤں, یتیموں اور بے کسوں کی خبر گیری کریں ۔ضرورت مندوں کی ضرورت پوری کریں ۔تراویح کی نماز خشوع و خضوع اور ذوق و شوق کے ساتھ پڑھیں اور پورا قرآن حکیم پڑھنے اور سننے کا اہتمام کریں تاکہ اللہ تعالی سے قریب بڑھے اور اس کی رضا حاصل ہو ۔
رمضان المبارک کے آخری عشرے میں اعتکاف کریں اور اس کی طاق راتوں میں شب قدر کو پانے کی کوشش کریں اور ان طاق راتوں میں زیادہ سے زیادہ عبادت کریں ۔تلاوت و تسبیح توبہ و استغفار اور دعا کا اہتمام کریں ۔اسماء کی ایک رات کی عبادت ہزار مہینوں کی عبادت راتوں سے افضل ہے ۔رمضان المبارک کے ماہ مقدس میں زیادہ سے زیادہ نیکی کمانے پر کمربستہ ہو جائیں ۔سوات کی دوسروں کو بھی نہایت محبت و اخلاص اور حکمت و بصیرت کے ساتھ خیر کی ترغیب دیتا پارسائی کی فضا عام ہو

Leave a Reply